منفی سوچوں سے چھٹکارا پائیں مثبت زندگی گزارنے کے تین طریقے

منفی سوچوں سے چھٹکارا پائیں مثبت زندگی گزارنے کے تین طریقے
پاس کھڑا موسم کی خوبصورتی کو انجوائے کررہا تھا۔ مسکراتے ہوئے گرد ن کو موڑ اپنے پوتے کی طر ف دیکھا تو اسے حیرت کا جھٹکا لگا۔ کیونکہ اس کا پوتا انجوائے کرنے کے بجائے خوف زدہ تھا۔ اپنے پوتے کی نظروں کاتعاقب کیا تو اس نے جانا پوتا کھڑ کی کے شیشے پربیٹھے ہوئے کاکروچ کو دیکھ رہا تھا اور ڈر رہا تھا۔

ہر چیز کا ہر صورتحال کا منفی اور مثبت پہلو ہوتا ہے۔ ہمیں وہی پہلو نظر آتا ہے جس پر ہم فوکس کرتے ہیں۔ جس طرح سوچنے کے، جس طرح دیکھنے کے عادی ہوتے ہیں۔ اب سو ا ل یہ ہے کہ اگر منفی سوچنے کا عادی ہے تو وہ اپنی سوچ کو کیسے بدل سکتا ہے؟ ہم آپ کو تین ایسے طریقے بتائیں گے۔ جو آپ کے سوچنے کاانداز بد ل دیں گے۔پہلاطریقہ جب بھی آپ کسی سے ملتے ہیں ۔ کوئی بھی کا م کررہے ہوتے ہیں۔ کسی بھی حالت میں ہوتے ہیں ۔

سب سے پہلے کیا کرتے ہیں؟ آپ مثبت چیز یا منفی چیز۔ آپ کی یہ عادت ، آپ کی مثبت یا منفی سوچ کو ظاہر کرتی ہیں۔ اگر آپ کسی سے ملتے ہیں ۔ کیا آپ کو اس کا ہئیر سٹائل اچھالگتا ہے؟ یا آپ کو اس کے کپڑوں کا رنگ عجیب لگتا ہے؟ یا اس کے پہنے ہوئے جوتے برے لگتے ہیں ؟ سب سے پہلے آپ کو اچھی یعنی مثبت چیز نظر آتی ہے۔ یا منفی ۔ جو چیز آپ سب سے پہلے نوٹس کرتے ہیں ۔ وہ آپ کی مثبت یا منفی سوچ کو ظاہر کرتی ہے۔ اس لیے اپنی سوچ کو مثبت بنانے کےلیے سب سے پہلا کام یہ کریں۔ کہ ہر چیز کی ، ہرشخص کی ، مثبت چیزیں سے سے پہلے نوٹ کرنے کی کوشش کیا کریں۔

جس شخص سے بھی آپ ملیں۔ نوٹ کریں کہ اس میں اچھا کیا ہے اس کی مثبت چیزوں کی لسٹ بنائیں۔ اپنے ذہن میں بنائیں ۔ اگر آپ ایسا کرنا شروع کریں ۔ تو آپ یقین رکھیں ۔ تو کچھ دنوں کے بعد آ پ کو ہر طر ف اچھائی نظر آنا شروع ہوجائے گی۔ دوسرا طریقہ اگر آپ کو لگتا ہے آپ کی زندگی میں کچھ اچھا نہیں ہے۔آپ کے ساتھ ہمیشہ برا ہوتا ہے۔ تو میں آپ کو سوچ بدلنے کا ہی زبردست طریقہ بتاتا ہوں۔ آپ ایک کام کریں۔ آپ ایک جار لیں ۔ شیشے کا جار یا پلاسٹک کاکوئی بھی جار۔

اور اس کو اپنے گھر میں محفوظ جگہ پر رکھیں۔ اگر پورے دن میں آپ کے ساتھ کچھ اچھا ہوتا ہے۔ جو بھی آپ کے ساتھ اچھا ہوتاہے ۔ آپ کو کوئی خوشی ملتی ہے۔ کوئی کامیابی ملتی ہے۔ تو آپ اس کو ایک پیپر پر لکھیں ۔ اس پیپر کو الماری میں رکھتے ہوئے اس جار میں ڈال لیں۔ اب روزانہ کی بنیا د پر یہ کام کریں ۔ ایک مہینے کے بعد آپ دیکھیں گے کہ وہ جار بھر چکا ہوگا اور وہ جار آپ کی خوشیوں اور کامیابیوں سے بھرا ہوگا۔ اور آپ کو اندازہ ہوگا۔

کہ آپ کی زندگی میں کتنی خوشیاں ہیں ؟ کتنی کامیابیاں ہیں؟ مگر آپ کو اس کااحسا س بھی نہیں تھا۔ آپ کو ان رحمتوں پر اللہ کا شکر ادا کریں۔ اگر ہم پلٹ کر دیکھیں تو ہماری زندگی میں بے شما ر ایسی چیزیں ہیں۔ جن کو ہم نے شدت سے خواہش کی ہوتی ہے۔ جو ہمیں مل چکی ہوتی ہیں ۔ مگر افسوس ہم صرف وہی یاد رکھتے ہیں جو ہمیں نہیں ملتا۔تیسرا طریقہ اگر آپ ایک کامیاب زندگی گزارنا چاہتے ہیں اور اپنے اندر مثبت سوچ پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ تو اس کے لیے ایک اصول ہے جو آپ کو بتاتے ہیں۔ وہ سوفیصد” آر “اور زیروفیصد” بی” ہے۔ زندگی میں آپ جو کچھ بھی ہیں جس بھی پوزیشن پر ہیں اپنی زندگی کی کامیا بیوں اور ناکامیوں ، اچھائیوں اور برائیوں کی ذمہ داری خود لیں۔ یعنی سوفیصد “ذمہ داری” اور زیروفیصد”شکایت ” کا اصول بنائیں۔ ہمیشہ اپنی ناکامی کی ذمہ داری خود لیں یہ اصول آپ کی سوچ کو مثبت بنا دے گا اور آپ کے لیے کامیابی کے دروازے کھول دے گا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *