الحمداللہ اس وظیفہ کی برکت سے بہت سے ظالم شوہر مہربان اور محبت کرنیوالے بن گئے

عورت كى ايك بہت حساس اور سنگين ذمہ دارى ،بچوں كى پرورش ہے ۔ بچے پالنا آسان كام نہيں ہے بلكہ بہت صبر آزما اور كٹ۔ھن كام ہے۔ ليكن يہ ايك بيحد مقدس اور قابل قدر فريضہ ہے جو قدرت نے عورت كے سپردكيا ہے ۔يہاں مختصراً چند باتين بيان كى جاتى ہيں ۔تاریخ گواہ ہے کہ ایک عرصہٴ دراز سے عورت مظلوم چلی آرہی تھی۔ یونان میں، مصر میں، عراق میں، ہند میں، چین میں، غرض ہرقوم میں ہر خطہ میں کوئی ایسی جگہ نہیں تھی۔

جہاں عورتوں پر ظ.لم کے پہاڑ نہ ٹوٹے ہوں۔ لوگ اسے اپنے عیش وعشرت کی غرض سے خریدوفروخت کرتے ان کے ساتھ حی۔وانوں سے بھی بُرا سلوک کیاجاتاتھا۔ حتی کہ اہلِ عرب عورت کے وجود کو موجبِ عار سمجھتے تھے اور لڑکیوں کو زن.دہ درگ.ور کردیتے تھے۔ ہندوستان میں شوہر کی چ.تا پر اس کی بیوہ کو جلایا جاتا تھا ۔ واہیانہ مذاہب عورت کو گ۔ناہ کا سرچشمہ اور معصیت کا دروازہ اور پاپ کا مج۔سم سمجھتے تھے۔ اس سے تعلق رکھنا روحانی ترقی کی راہ میں رکاوٹ سمجھتے تھے۔ دنیا کے زیادہ تر تہذیبوں میں اس کی سماجی حیثیت نہیں تھی۔ اسے ح۔قیر وذلیل نگ۔اہوں سے دیکھاجاتا تھا۔ اس کے معاشی وسیاسی حقوق نہیں تھے۔ وہ آزادانہ طریقے سے کوئی لین دین نہیں کرسکتی تھی۔ وہ باپ کی پھر شوہر کی اور اس کے بعد اولادِ نرینہ کی تابع اور محکوم تھی۔

اس کی کوئی اپنی مرضی نہیں تھی اور نہ ہی اسے کسی پر کوئی اقتدار حاصل تھا؛ یہاں تک کہ اسے فریاد کرنے کا بھی حق حاصل نہیں تھا۔لیکن اسلام ایک ایسا مذہب ہے جس نے عورت پر احسان عظیم کیا اور اس کو ذلت کے گ۔ڑھوں سے نکالا جب کہ وہ اس کی انتہا کو پہنچ چکی تھی، اس کے وجود کو گ۔و ارا کرنے سے بھی انکار کیا جارہا تھا ۔تو نبیِ کریم ﷺرحمة للعالمین بن کر تشریف لائے اور آپ نے پوری انسانیت کو اس اگ کی ل۔پیٹ سے بچایا اور عورت کو بھی اس گ۔ڑھے سے نکالا۔ اور اس زندہ دف۔ن کرنے والی عورت کو بے پناہ حقوق عطا فرمائے اور قومی وملی زندگی میں عورتوں کی کیا اہمیت ہے۔ اس کو سامنے رکھ کر اس کی فطرت کے مطابق اس کو ذمہ داریاں سونپیں۔آج کا وظیفہ جو ظ۔الم غ۔صے کرنیوالا سخت مزاج شوہر ہوتا ہے ۔

ایسا شخص جو اپنے گھروالوں پر بات بات پر غ۔صہ ہوجاتے ہیں۔ غصہ کرنے لگتے ہیں ۔ گ۔الیاں دیتے ہیں تو اس طرح کی عادات ہوتی ہیں۔ اکثر شکایات آتی رہتی ہیں ۔اس حوالے سے آپ کیلئے ایک وظیفہ بتائیں گے جو لوگ یہ عمل کریں گے آپ چند دن میں ایسا رزلٹ دیکھیں گے کہ شوہر بلکل نرم ہوجائیں گے۔ آپ نے سورۃ الرحمان پارہ 27کی پوری تلاوت کرنی ہے ۔ روزانہ دن میں کسی بھی وقت ایک مرتبہ سورۃ الرحمان تلاوت کرکے ایک گلاس پانی پر دم کرکے اپنے شوہر کو وہ پانی کسی بھی طرح سے پلادینا ہے ۔آپ یہ سورت کسی بھی وقت پڑھ سکتے ہیں۔ وقت کی کوئی پابندی نہ ہے ۔ اس کے بعد ان کے کپڑے وغیرہ ہیں اس پر بھی پانی چھ۔ڑ ک دیں ۔ یہ عمل آپ نے 41دن کی نیت سے لگاتار کرنا ہے ۔چونکہ خواتین نے یہ عمل کرنا ہے تو ناغہ کے دنوں میں یہ عمل نہ کریں ۔بلکہ پاکی کے دنوں کو مسلسل شمار کرنا ہوگا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *