دوران نماز پیشاب کے قطروں کا آنا اگر نماز میں قطرے آجائیں تو کیانماز ہوجاتی ہے

وضو کرکے آیا پیشاب کا قطرہ آگیا نماز میں کھڑا ہوا تھا نماز پڑھ تھا رکوع سجدہ کررہا تھا نماز کی حالت میں پیشاب کا قطرہ آگیا کیا مسئلہ ہے آج کل یہ مسائل بہت پیش آتے ہیں اسی لیے ان کو بتانا بہت اہم اور ضروری سمجھتے ہیں

۔جیسا کہ فتویٰ محمودیہ جلد نمبر دو صفحہ نمبر49پر بہشتی زیور پر جلد نمبر 1صفحہ نمبر چون پر چند مسائل آپ کو ملیں گے سب سے پہلی بات سمجھیں کہ اگر بیماری پیشاب کے قطرے کی بیماری اگر وہ اس طرح ہو مسلسل پیشاب کے قطرے آتے رہتے ہیں یا پھر اتنا وقت نہیں ہے کہ وضو کرکے کم ازکم فرض نماز پڑھ سکے اتنا بھی وقت نہیں ملتا ۔

وضو کرنے گیا جیسے وضو سے فارغ پھر سے قطرہ آگیا یا وضو کرلیا نماز میں ہی تھا فرض نماز پڑھ رہا تھا سنت وغیرہ چھوڑدیجئے اتنا وقت نہیں ملتا ہے کہ وضو کرکے فرض نماز کم ازکم ادا کرے تو ایسی صورت میں وہ مریض کے حکم میں آجائیگا ۔اگریہ مسئلہ یہی معاملہ پیش آرہا ہے تو ایسی صورت میں وہ ہر نماز کے وقت میں وضو کرے گا ۔جیسے ظہر کی نماز کا وقت آیا ظہر کی نماز کے وقت وضو کرلے گا۔ وضو کرے گا جتنی مرتبہ پیشاب کا قطرے آتا رہے مسلسل آتا رہے اس کا وضو نہیں ٹوٹا وضو باقی ہے اس ظہر کے پوری نماز کے وقت میں جتنی مرتبہ چاہے گا جتنی نمازین چاہے گا پڑھ سکتا ہے قضا نماز سنت نماز واجب نماز قرآن کی تلاوت کرنا چاہے گا بلکل کرسکتا ہے کوئی حرج نہیں اس کے حق میں پیشاب وغیرہ ناقص وضو نہیں ہے ۔

جیسے ہی دوسری نماز کا وقت داخل ہوجائیگا۔ظہر کی نماز کے وقت میں وضو کیا نماز پڑھی اور عصر کی نماز کا وقت آگیا خود بخود جیسے ہی عصر کی نماز کا وقت داخل ہوگا اس کا وضو ٹوٹ گیا پھر سے عصر کی نماز کیلئے وضو کرنا پڑے گا اس کے بعد عصر کی نماز پورے وقت میں جتنی نمازیں چاہے گا پڑھ سکتا ہے ۔یہ مریض کے بارے میں بتایا گیا ہے لیکن اگر ایسا نہیں ہے اتنا وقت ملتا ہے کہ وضو کرکے کم سے کم فرض نماز پڑھ سکتا ہے تو اس کیلئے ضروری ہے وہ پاک کپڑے میں جیسے ہی فوراً پیشاب کرے اور فوراً جتنا جلد ہوسکے جائے اس کیلئے اب وہ پیشاب اس کیلئے ناپاک ہی ہے ۔

اس پیشاب کے قطرے سے اس کا وضو بھی ٹوٹ جائیگا۔ اب اس کیلئے فوراً وضو کرکے کم سے کم فرض نماز پڑھ لے اگر اتنا ٹائم نہیں ہے تو مسئلہ وہی ہے جو بتایا گیا اتنا وقت ہے کہ فرض نماز کے ساتھ سنت نماز بھی پڑھ سکتا ہے اسی طرح بار بار تو مسلسل پیشاب کے قطرے نہیں آرہے لیکن وضو کرنے کے بعد آگئے تب بھی اس کا وضو ٹوٹ جائیگا جہاں پر وہ پیشاب کا قطرہ لگا ہوگا ۔ اپنے جسم پر یا کپڑے وغیرہ پر اتنی ہی جگہ دھو دو یہاں پر ایک چیز اور بتادیں لوگ سمجھتے ہیں کہ جب پیشاب کا قطرہ آجائیگا آدمی ناپاک ہوجائیگا جتنی جگہ پر پیشاب لگاقطرہ لگا ہے اتنی جگہ کو دھولیجئے آپ پاک ہوجائیں گے ۔آپ پر غسل کرنا فرض نہیں ہوگا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *