کیا آپ لاچار اورمجبور ہیں کیا آپ کے گھر میں رزق کی تنگدستی ہے کیا آپ کوئی حاجت پوری نہیں ہورہی

حضرت ابوہریرہؓ سے مروی ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فرمایا ’’جس شخص نے رجب کی ستائیسویں کو روزہ رکھا اُس کیلئے 6 ماہ کے روزوں کا ثواب لکھا جاتا ہے۔حضرت حسن بصریؒ بیان کرتے ہیں

کہ حضرت ابن عباسؓ ستائیس رجب کو صبح سے ہی مسجد میں گوشہ نشین ہو کر ظہر کے وقت تک نماز میں مشغول رہتے، ظہر کے وقت کچھ نوافل وغیرہ پڑھ کر 4 رکعتیں ادا کرتے

جن کی ہر ایک رکعت میں سورۂ فاتحہ ایک بار سورۂ فلق اور سورۂ الناس ایک ایک بار سورۂ قدر 3 بار اور سورۂ اخلاص 50 بار پڑھتے تھے، اس کے بعد عصر کے وقت تک دعا میں مشغول رہتے، کیوں کہ رسول اللہ ﷺ بھی ایسا ہی فرمایا کرتے۔روایت ہے کہ حضرت عمر بن عبد العزیزؒ نے حجاج بن ارطاۃحاکم بصرہ یا عدی بن ارطاۃ کو لکھا کہ سال بھر میں 4 راتوں کی عبادت کا التزام رکھا کرو! کہ ان میں اللہ تعالیٰ خاص طور پر اپنی رحمت بہاتے ہیں رجب کی پہلی رات ، نصف شعبان کی رات ، 27 رمضان کی رات اور عید الفطر کی رات۔قرآن کریم کی سورۃ یوسف جس کے اندر یوسف ؑ کا پورا واقعہ ہے

بہت ہی خوبصورت واقعہ اس واقعہ کو سننے والا حیران ہوجاتا ہے کہ اللہ رب العزت اپنے پیغمبر حضرت یوسفؑ کو جیل سے نکال کر کہاں تک پہنچایا پھر ملک مصر کا بادشاہ بنایا ۔ کتنی عظمتیں عطاء کیں ۔ اللہ تعالیٰ کے اس فضل کرم کو دیکھ کر ہر بندہ حیران ہوجاتا ہے ۔ بے اختیار اس کی زبان سے نکلتا ہے سبحان اللہ اے اللہ تو کتنی عظمتوں اور بلندیوں کا مالک ہے ۔اسی طرح اللہ تعالیٰ اپنے نیک وصالح بندوں کیساتھ معاملہ فرماتا ہے ۔سورۃ یوسف کی اتنی فضیلت ہے اگر کوئی شخص روزانہ اس مبارک سورت کی تلاوت کرتا ہے تو اللہ رب العزت اس کی ہر جائز حاجت کو پوری کردیتا ہے ۔ کسی بھی جائز حاجت یا ضرورت کیلئے وہ دعا مانگے گا اس کی دعا قبول ہوگی اگر غریب آدمی تنگدست آدمی لاچار اور مجبور آدمی اس کی روزانہ تلاوت کرے گا اللہ تعالیٰ اس کی تنگی کو دور فرمادیں گے

اور اسے عزت کی روزی عطاء فرمائیں گے ۔ کشادہ رزق اللہ اسے اس کی تلاوت کی برکت سے عطاء فرمائیں گے ۔ اس کا عظیم فائدہ یہ ہے کہ اگر کوئی قرآن پاک حفظ کررہا ہے چاہتا ہے سب سے پہلے سورۃ یوسف کو حفظ کرلے انشاء اللہ وہ بہت جلد قرآن پاک کو یاد کرلیتا ہے ۔ اس کا عظیم فائدہ ہے کہ اگر روزانہ اس کی تلاوت کی جائے تو اس کی اولاد نیک اور صالح ہوگی خوبصورت ہوگی اور برائیوں سے وہ پاک وصاف رہے گی غلط حرکتوں سے وہ محفوظ رہے گی شیطان کے شر اس کی مکمل حفاظت رہے گی ۔ یہ اس کے عظیم قسم کے فائدے ہیں اس کے علاوہ جو عظیم فائدہ جس کی کوئی لالچ بھی بندہ نہیں کرتا وہ یہ ہے کہ اللہ اس کے درجات کو بلند کریں گے اور جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطاء فرمائیں گے ۔ کتنی بڑی یہ شان سعادت ہے دنیا کے اندر اگراچھا پڑوس مل جاتا ہے تو اس پر بندہ فخر کرتا ہے جنت کے اندر کسی بھی پیغمبر کی صحبت کسی بھی پیغمبر کاپڑوس مل جائے اس سے بڑی کامیابی کا ہوگی ۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *